شدت پسندوں کی جانب سے خیبرپختونخواہ کے سکولز پر حملہ، وفاقی و صوبائی حکومت کی مشترکہ ٹاسک فورس قائم

شدت پسندوں کی جانب سے خیبرپختونخوا کے نئے ضم شدہ اضلاع میں اسکولوں کو نقصان پہنچانے کے واقعات پر سیکرٹری تعلیم محی الدین وانی نے چیف سیکرٹری خیبرپختونخوا ندیم اسلم چوہدری کو خط لکھا، جس میں سیکرٹری تعلیم نے اسکولوں کی تباہی پر شدید تشویش کا اظہار کیا۔ اس مقصد کے لیے وفاقی اور صوبائی نمائندوں پر مشتمل ایک مشترکہ ٹاسک فورس کے قیام کی تجویز پیش کی گئی۔

سیکرٹری تعلیم محی الدین وانی نے اپنے خط میں لکھا کہ ٹاسک فورس تباہ شدہ اسکولوں کی تعمیر نو اور علاقے میں حفاظتی اقدامات کو بڑھانے کے لیے جامع منصوبہ تیار کرے گی۔ ٹاسک فورس کو مزید شدت پسندانہ سرگرمیوں کو روکنے اور کمیونٹی کی شمولیت اور لچک پیدا کرنے پر توجہ دینی چاہیے تا کہ تعلیم بغیر کسی خوف کے پھل پھول سکے۔

محی الدین وانی نے مزید لکھا کہ یہ بات نہایت خوفناک ہے کہ دہشت گردی کی اس کارروائیوں میں لڑکیوں کی تعلیمی اداروں کو نشانہ بنایا جا رہا ہے، جو کہ قومی ترقی کی حکمت عملی کا سنگ بنیاد ہے اور اس محاذ پر کوئی بھی حملہ ہمارے مستقبل پر حملہ ہے۔

انہوں نے مزید لکھا کہ میں یقین دلاتا ہوں کہ وفاقی حکومت خیبرپختونخوا کی صوبائی انتظامیہ کے ساتھ یکجہتی سے کھڑی ہے اور ہم تعلیمی اداروں کی حفاظت کو یقینی بنانے اور تباہ شدہ تعلیمی اداروں کی فوری تعمیر نو کے لیے تمام ضروری اقدامات کے لیے پرعزم ہیں۔

خط کے اختتام پر سیکرٹری تعلیم نے لکھا کہ یہ ضروری ہے کہ ہم انتہا پسندی کے خطرے کا مقابلہ مل کر کریں اور طلبہ و اساتذہ کے تحفظ کو یقینی بنائیں، ہم انتہا پسند عناصر کی طرف سے درپیش مسائل کے باوجود مل کر اس بات کو یقینی بنائیں گے، میں آپ سے فوری جواب اور اس مسئلے کے حل کے لیے مل کر کام کرنے کا منتظر ہوں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں