وزیراعظم کی لوڈشیڈنگ کا دورانیہ کم سے کم کرنے کی ہدایت

وزیراعظم شہباز شریف کی زیر صدارت بجلی کی لوڈ مینجمنٹ اور بجلی چوری کے خلاف اقدامات پر اہم جائزہ اجلاس منعقد ہوا، جس میں وزیراعظم نے ملک کے مختلف علاقوں میں ہونے والی لوڈشیڈنگ کو کم سے کم کرنے، بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں کی نجکاری کا عمل تیز کرنے اور اس حوالے سے ماہرین کی خدمات حاصل کرنے کی ہدایات جاری کیں۔

وزیراعظم نے مزید ہدایت کی کہ بلوچستان میں ٹیوب ویلز کو سولر توانائی پر منتقل کرنے کی حکمت عملی جلد از جلد تیار کی جائے۔ اس اجلاس میں بجلی کی لوڈ مینجمنٹ اور بجلی چوری کے خلاف اقدامات کے بارے میں بریفنگ دی گئی۔

بریفنگ کے دوران بتایا گیا کہ خیبرپختونخوا کے وزیراعلیٰ علی امین گنڈاپور اور وفاقی وزیر توانائی کے درمیان بات چیت ہوئی، جس کے نتیجے میں خیبرپختونخوا میں بجلی کی لوڈ مینجمنٹ کے حوالے سے ایک متفقہ منصوبہ بنایا گیا ہے، اس منصوبے کے تحت خیبرپختونخوا میں بجلی کی لوڈ شیڈنگ میں کمی، بجلی کے بل نہ دینے والوں سے وصولی اور اور لائین لاسز میں کمی لائی جائے گی۔

بریفنگ میں مزید بتایا گیا کہ بجلی کی لوڈشیڈنگ ان علاقوں میں کی جا رہی ہے جہاں بجلی کی چوری اور لائن لاسز زیادہ ہیں اور بلوں کی وصولی بہت کم ہے، جنوبی اور شمالی ٹرانسمیشن لائن کی اپ گریڈیشن سے بجلی کے ترسیلی نظام میں بہتری آئے گی، بجلی کی چوری کی روک تھام کے لیے صوبائی اور ڈویژن کی سطح پر ٹاسک فورسز بنائی جا رہی ہیں، ان ٹاسک فورسز کی کارکردگی کا ہفتہ وار جائزہ لیا جائے گا۔

وزیراعظم شہباز شریف نے ہدایت دی کہ عوام کی سہولت کے پیش نظر شدید گرمی میں لوڈ مینجمنٹ کی صورتحال میں بہتری لائی جائے اور بجلی چوری کرنے والوں کے خلاف سخت کارروائی کی جائے۔ وزیراعظم نے اپنے بیان میں کہا کہ بجلی چوری کے خاتمے کے مشن کو مکمل کرتے ہوئے بجلی چوری کا مکمل خاتمہ کیا جائے گا اور میں خود ہر ماہ بجلی چوری کی روک تھام کی پیشرفت کا جائزہ لوں گا۔

وزیراعظم شہباز شریف نے مزید کہا کہ صوبائی حکومتیں اور قانون نافذ کرنے والے ادارے بجلی چوری کے خلاف مہم میں بھرپور تعاون فراہم کریں، قومی مفاد اور ملک کی ترقی و خوشحالی کے لیے یہ ضروری ہے کہ تمام حکومتی ادارے بجلی چوری کے خلاف اپنی ذمہ داریاں پوری ایمانداری اور محنت سے نبھائیں۔ وزیراعظم نے سختی سے ہدایت دی کہ بجلی کی اوور بلنگ کسے صورت نہیں ہونی چاہیے۔

اجلاس میں متعدد وفاقی وزراء، اعلیٰ سرکاری افسران اور صوبائی نمائندوں نے ویڈیو لنک کے ذریعے شرکت کی۔ اہم شرکاء میں وفاقی وزراء احد خان چیمہ، محمد اورنگزیب، مصدق ملک، اویس احمد خان لغاری، وزیر مملکت علی پرویز ملک، وزیراعظم کے کوآرڈینیٹر رانا احسان افضل، چیئرمین واپڈا، تمام صوبوں کے چیف سیکرٹریز اور آئی جی پولیس شامل تھے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں