سٹوڈنٹس پاکستان کی بجائے کیوں بیرون ملک ایم بی بی ایس کے لیے جاتے ہیں؟

وزیر اعظم شہباز شریف نے معیار کی تحقیقات اور میڈیکل تعلیم کو بہتر بنانے کے لئے اہم قدم اٹھایا ہے، ایک ہائی پاورڈ کمیٹی کا قیام کیا ہے۔ اس کمیٹی کا رہنما نائب وزیراعظم اور وزیر خارجہ اسحاق ڈار ہیں، جو 25 رکنیوں سے مشتمل ہے، اور اسے وزیر اعظم شہباز شریف کی ہدایت پر قائم کیا گیا ہے۔

اس کمیٹی کا اہم مقصد ملک بھر کے نجی میڈیکل کالجز کی تعلیمی معیار کا جائزہ لینا ہے۔ اس کے ذریعے، کمیٹی کا مقصد یہ ہے کہ یہ ادارے طلباء کو بلند معیار کی میڈیکل تعلیم فراہم کریں۔ اس جائزہ کا اہمیت ہے کہ ملک میں تربیت یافتہ صحت کاروں کی کل کواچ کی بہتری کی جا سکے۔

اس کے علاوہ، کمیٹی وہ وجوہات جانچے گی کہ طلباء کیوں بیرون ملک میڈیکل تعلیم حاصل کرنے کی راہ پر چل رہے ہیں۔ اس ترنیب کو سمجھنا اہم ہے کہ اس نظام میں کیا کمی یا خامیاں ہیں۔ ان وجوہات کی تشخیص کرکے، کمیٹی طلباء کو ملک میں تعلیم حاصل کرنے کی حوصلہ افزائی کرنے کی سمت میں کام کر سکتی ہے، اس طرح ملک کے اندر مواہب کو بچانے میں مدد فراہم کر سکتی ہے۔

کل کی بات یہ ہے کہ اس کمیٹی کے قیام نے حکومت کی میڈیکل تعلیم اور تحقیقات کے معیارات میں بہتری کی عہد کی نوعیت کا اظہار کیا ہے۔ یہ مسئلے کو حل کرنے کے لئے ایک فعال ترین ترکیب کی سراگ لیتا ہے اور یہ یقین دلاتا ہے کہ پاکستان کے صحت کار کشمکشوں کو حل کرنے کے لئے مجہدہ کرنے کی ہمت ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں