پاکستان کا پہلا سیٹلائٹ مشن ”آئی کیوب قمر“ چاند کے مدار میں داخل

پاکستان کا پہلا مصنوعی سیارہ آئی کیوب قمر چانگ ای 6 کی مدد سے چاند کے قریب پہنچ گیا ہے۔ اس مصنوعی سیارے کو آج چاند کے گرد مقررہ مدار میں چھوڑا جائے گا۔ آئی کیوب قمر کو پاکستانی وقت کے مطابق شام ساڑھے 6 بجے کے بعد کسی بھی وقت ڈپلائے کیا جائے گا۔

اس مشن کی نگرانی کے لیے پاکستانی خلائی سائنسدان ڈاکٹر خرم خورشید اور ڈاکٹر قمر الاسلام چین میں موجود ہیں۔ آئی کیوب قمر کی ڈپلائمنٹ سے پہلے ذیلی سسٹمز کا ایس او پیز کے مطابق مکمل طور پر جائزہ لیا جائے گا۔ سیٹلائٹ امیجنگ سسٹم کے آپریشنل ہونے سے پہلے تمام ذیلی سسٹمز کی تصدیق میں تقریباً ایک ہفتے کا وقت درکار ہو سکتا ہے۔

مصنوعی سیارے آئی کیوب قمر سے چاند کی پہلی تصویر 15 یا 16 مئی تک موصول ہونے کے واضح امکان ہیں۔ چانگ ای 6 مشن قمری مدار میں داخل ہو چکا ہے۔ اگلے مرحلے میں چانگ ای 6 کے لینڈر اور اسینڈر کو چاند کے جنوبی قطب کی عقبی جانب لینڈ کروایا جائے گا، اور پھر مین لینڈر 1 جون کو چانگ ای 6 مشن سے الگ ہو جائے گا۔

2 جون کو چانگ ای 6 مشن چاند کی سطح پر مٹی اور چٹانوں کے نمونے جمع کرے گا۔ یہ مشن چار جون کو اپنا واپسی کا سفر شروع کرے گا اور اسی دن چانگ ای 6 مشن ڈاکنگ کرے گا۔ پلان کے مطابق آئی کیوب قمر چانگ ای 6 مشن 53 روزہ مشن مکمل کرنے کے بعد 25 جون، 2024 کو زمین پر واپس لینڈ کرے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں