ماضی میں گول ٹرافی لانا تھا جو نہ لا سکے، اس دفعہ ورلڈ کپ پر مکمل فوکس ہے، بابر اعظم

قومی کرکٹ ٹیم کے کپتان بابر اعظم نے ورلڈ کپ سے قبل قذافی اسٹیڈیم لاہور میں پریس کانفرنس کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہمارا ماضی میں یہی گول تھا کہ ٹرافی جیتنی ہے مگر بدقسمتی سے ایسا نہیں ہوا، ہمارا فوکس ورلڈ کپ پہ ہی ہے جبکہ کھلاڑیوں کا فوکس جیت پر ہے، ہمارا ٹیم کمبی نیشن اچھا ہے اور ورلڈکپ کے لیے تیاری بھی اچھی ہے، ہمیں امید نہیں تھی کہ حارث روف اتنی جلدی فٹ ہو جائیں گے، اب کارث رؤف کی فٹنس اچھی ہے، حارث نے ٹی ٹوینٹی میچ میں بہترین پرفارمنس دکھائی ہے۔

بابر اعظم نے مزید کہا کہ عامر جمال فائن آل راونڈر ہے، ٹیم کے لیے جو بہترین تھا اُسے منتخب کیا گیا ہے، حارث روف کو آرام کے بعد ٹیم میں شامل کیا گیا ہے اور امید ہے کہ وہ بہترین پرفارمنس دکھائے گا،محمد حارث ٹاپ آرڈر کا بیٹر ہے لیکن اس کی جگہ نہیں بن سکی، اس وقت ٹاپ آرڈر میں محمد رضوان، صائم اور فخر شامل ہیں، ٹیم میں پندرہ کے پندرہ کھلاڑیوں کا کردار اہم ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ گیری کرسٹن کافی تجربہ کار ہیں اور وہ ابھی سے ٹیم کی معاملات میں دلچسپی لے رہے ہیں، انہیں ٹیم کے متعلق ایک ایک چیز سے آگاہ کیا جا رہا ہے، انکے ساتھ مسلسل رابطے میں ہیں، گیری کرسٹن فوری طور پر قومی ٹیم کو جوائن کریں گے، کسی ایک کھلاڑی یا ٹیم کا پلان نہیں ہوتا بلکہ ہر ٹیم کے لئے ایک منفرد پلان بنایا جاتا ہے، نیویارک کی کندیشنز کے مطابق پلان کریں گے، ویرات کوہلی ایک بہترین کھلاڑی ہیں اور ان کے اہمیت کو دیکھتے ہوئے ٹیم کی پلاننگ کی جائے گی۔

کپتان بابر اعظم نے کہا کہ ہم آئرلینڈ اور انگلینڈ میں ورلڈ کپ کے لئے تیاری کر رہے ہیں، کوشش ہو گی بہترین کمبی نیشن کے ساتھ ورلڈ کپ سکواڈ کو میدان میں اتاریں، روٹیشن کیلئے وقت کم ہے، اب وہی کھیلیں گے جو ہم ورلڈ کپ کیلئے پلان کر رہے ہیں، ورلڈ کپ میں انفرادی چیزیں ایک طرف رکھنی ہوتی ہیں، حسن علی تجربہ کار باؤلر ہیں، یہ بات سلیکٹرز نے بھی واضح کی ہے کہ حسن علی کو پندرہ کھلاڑیوں میں نہیں بلکہ بیک اپ کے طور پر ٹیم میں شامل کیا گیا ہے۔

قومی ٹیم کے کپتان نے مزید کہا کہ زمان خان نیو بال کے بولر ہیں، ہمارے پاس پہلے ہی نیو بال کے باولرز موجود ہیں، سات سلیکٹرز ہیں اور تمام فیصلے ان سب کی مشاورت سے کیے جاتے ہیں، کسی کے ساتھ کوئی زیادتی نہیں ہو رہی، حارث روف نے ٹی ٹوینٹی میں بہترین پرفارمنس دی ہے، ہم کنڈیشنز کے مطابق کھیلنے کی کوشش کرتے ہیں، بھارت کے خلاف ہی نہیں بلکہ تمام میچوں میں بہترین کمبی نیشن کے ساتھ جائیں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں