امریکی یونیورسٹی پرنسٹن میں طلبہ کی غزہ کے حق میں بھوک ہڑتال

امریکہ کی پرنسٹن یونیورسٹی کے طلباء نے فلسطین میں اسرائیلی جارحیت کے خلاف احتجاجاً بھوک ہڑتال کا اعلان کیا ہے۔ ان طلبا کا کہنا ہے کہ وہ غزہ کی پٹی میں نہتے شہریوں کے قتل عام نہ روکنے تک بھوک ہڑتال جاری رکھیں گے۔

پرنسٹن یونیورسٹی کے کیمپس میں “یکجہتی فلسطین کیمپ” قائم کیا گیا ہے، جہاں طلباء فلسطین کی حمایت میں کئی روز سے احتجاج کر رہے ہیں۔ کیمپ لگانے والےطلبا کا کہنا ہے کہ انہوں نے غزہ میں قتل عام اور انسانی حقوق کی خلاف ورزی کے خلاف احتجاج کے طور پر بھوک ہڑتال کا فیصلہ کیا ہے۔

طلباء کا مزید کہنا ہے کہ انہوں نے امریکی حکومت کے سامنے اپنے مطالبات رکھے تھے، جن میں یہ بھی شامل تھا کہ امریکی حکومت غزہ میں قتل عام کو بند کروائے، مگر حکومت نے ہمارے مطالبات کو نظرانداز کیا جس کی وجہ سے ہم بھوک ہڑتال کرنے پر مجبور ہوئے ہیں۔

طلباء نے امریکی حکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ غزہ میں فلسطینیوں کے قتل عام کو روکیں اور اسرائیل کو ہر قسم کی مدد فراہم کرنا بند کر دیں۔ واضح رہے کہ امریکہ کے مختلف شہروں کی یونیورسٹیوں میں پولیس کی جانب سے درجنوں طلباء کو گرفتار کرنے کے باوجود احتجاج جاری ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں