نجی میڈیکل کالجز کی فیسوں میں لاکھوں روپے اضافہ، PM&DC خاموش تماشائی

میٹرک، ایف ایس سی میں 90 فیصد سے زائد مارکس کے باوجود پی ایم ڈی سی کی جانب سے منعقد کیے گیے ایم ڈی کیٹ میں مارکس کم ہونے کی وجہ سے ہر سال ہزاروں سٹوڈنٹس سرکاری میڈیکل کالجز میں داخلے سے محروم رہتے ہیں، جبکہ نجی میڈیکل کالجز کی فیسوں میں ہوشربا اضافہ سٹوڈنٹس کے تعلیم جاری رکھنے میں بڑی مشکلات کا باعث ہے۔

پی ایم ڈی سی کی جانب سے متعدد نوٹس لینے کے باوجود نجی میڈیکل کالجز کی جانب سے فیسوں میں خود ساختہ لاکھوں روپے کا اضافہ کیا جانا ایک معمول بن چکا ہے۔

عام اندازے کے مطابق نجی میڈیکل کالجز میں سالانہ 12 سے لیکر 30 لاکھ روپے فیس موصول کر رہے ہیں، جبکہ پی ایم ڈی سی کی جانب سے اس معاملے پر سنجیدگی سے اقدامات نہیں کیے جا سکے۔

ترجمان کا موقف ہے کہ اس حوالے سے کمیٹی تشکیل دی گئی ہے جو مختلف نجی میڈیکل کالجز میں حال ہی میں بڑھائی گئی فیسوں کا جائزہ لے رہی ہے، جبکہ دوسری جانب نجی میڈیکل کالجز فیس میں اضافہ کی صفائی میں مہنگائی کو ایک بڑی وجہ قرار دیتے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں