پاکستان کا پہلا مشن “آئی کیوب قمر” آج چاند کی جانب روانہ کیا جائے گا

پاکستان کا پہلا مصنوعی سیارہ “آئی کیوب قمر” آج چاند کی جانب روانہ کیا جائے گا۔ لانگ مارچ 5 راکٹ چانگ ای 6 وینچانگ لانچ سینٹر سے پاکستان کے معیاری وقت کے مطابق آج دوپہر 12 بج کر 50 منٹ پر روانہ ہو گا۔ آئی کیوب قمر چین کے چانگ ای 6 قمری مشن کا حصہ ہے۔

چین کے وینچانگ سیٹلائٹ لانچ سینٹر سے چانگ ای 6 مشن کی روانگی کی تیاریاں اور فائنل کائونٹ ڈائون سے قبل تمام فائنل چیکس اور ریہرسلز بھی مکمل کر لی گئی۔ چانگ ای 6 مشن پانچ روز کا سفر مکمل کرنے کے بعد چاند کے قریب پہنچے گا۔

مشن کے پانچویں روز آئی کیوب قمر چانگ ای 6 سے الگ ہو جائے گا، جس کے بعد وہ چاند کے زیریں مدار میں گردش کرے گا اور اس دوران آئی کیوب قمر جنوبی قطب کی اہم تصاویر بنائے گا۔

آئی کیوب قمر کا ابتدائی ڈیٹا چینی خلائی ادارے، پاکستان میں سپارکو اور انسٹی ٹیوٹ آف اسپیس ٹیکنالوجی میں موصول ہو گا۔ اسکے بعد پاکستان اور چین آئی کیوب قمر سے موصول ہونے والے ڈیٹا کا استفادہ کریں گے۔

پاکستانی ماہرین نے مصنوعی سیارہ آئی کیوب قمر کو مکمل طور پر تیار کیا ہے۔ آئی کیوب قمر سیٹلائٹ پاکستان انسٹیٹوٹ اف سپیس ٹیکنالوجی کے ماہرین اور طلباء کی محنت کا نتیجہ ہے۔ اس پروجیکٹ کے ذریعے پاکستان نے چاند کی جانب خلائی تحقیق میں اہم ترین پیش رفت کی ہے۔

چین نے پاکستان کو ایشیا پیسیفک سپیس ریسرچ آرگنائزیشن کے رکن کے طور پر مشن میں شامل ہونے کی دعوت دی تھی۔ چینی خلائی ادارے نے دیگر ممالک کے مقابلے میں پاکستان کے پروپوزل کو قبول کیا اور ان کو چانگ ای 6 مشن کا حصہ بننے کی اجازت دی۔ پاکستانی سائنس دانوں نے خود آئی کیوب قمر کو ڈیزائن کیا ہے۔

پاکستانی سیٹلائٹ آئی کیوب قمر کو 6 سے 8 ماہ کے سخت آزمائشی مراحل سے گزارنے کے بعد چانگ ای 6 مشن کا حصہ بنایا گیا ہے۔ 7 کلو گرام وزنی آئی کیوب قمر چاند کے مدار میں چکر لگاتے ہوئے اپنے 2 کیمروں سے اہم ترین تصاویر بنائے گا۔اس مشن کا مقصد چاند کے جنوبی قطب سے مٹی اور چٹانوں کے سیمپلز کا حصول ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں