پاکستان کو چوتھے ٹی ٹوینٹی میچ میں شکست، نیوزی لینڈ 4 رنز سے کامیاب

نیوزی لینڈ نے چوتھے ٹی20 میچ میں پاکستان کو 4 رنز سے شکست دے کر سیریز میں 1-2 کی برتری حاصل کر لی۔ میچ لاہور کے قذافی اسٹیڈیم میں کھیلا گیا، جس میں پاکستان نے ٹاس جیت کر پہلے بولنگ کا فیصلہ کیا۔

نیوزی لینڈ نے پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے مقررہ 20 اوور میں 7 وکٹوں کے نقصان پر 178 رنز بنائے۔ مہمان ٹیم کے اوپنر ٹم رابنسن نے 51 اور ڈین فوکس کرافٹ نے 34 رنز بنائے، جبکہ ٹام بلینڈل 28 اور مائیکل بریسویل 27 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔

پاکستانی باؤلر عباس آفریدی نے 3 حریف کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا جبکہ زمان خان، افتخار احمد، محمد عامر اور اسامہ میر ایک ایک وکٹ حاصل کرنے میں کامیاب رہے۔

نیوزی لینڈ ٹیم نے پاکستان کو 179 رنز کا ہدف دیا لیکن پاکستان کی پوری ٹیم 174 رنز بنا کر آؤٹ ہو گئی۔ گرین شرٹس کی جانب سے فخر زمان نے 61 رنز کی ایک ممتاز اننگز کھیلی، مگر انکی محنت کے باوجود ٹیم کو فتح حاصل نہ ہو سکی۔ دوسری جانب افتخار احمد نے 23، عماد وسیم نے 22 اور صائم ایوب نے 20 رنز بنائے، جبکہ عثمان خان نے 16 رنز بنا کر پویلین لوٹ گئے۔

نیوزی لینڈ کی جانب سے ولیم او رورکے نے پاکستان کے خلاف 3 وکٹیں حاصل کیں اور مین آف دی میچ قرار پائے۔ بین سیئرس نے دو وکٹ حاصل کیں جبکہ مائیکل بریسویل اور جمی نیشم نے ایک ایک کھلاڑی کو آؤٹ کیا۔

ٹاس کے وقت پاکستان ٹیم کے کپتان بابر اعظم نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ بولنگ کا فیصلہ ڈیو فیکٹر کی وجہ سے کیا گیا، ہمارے دو پلیئرز انجرڈ ہیں، اس میچ کے لیے چار تبدیلیاں کی گئی ہیں، محمد عامر، عماد وسیم، فخر زمان اور زمان خان کو پلیئنگ الیون میں شامل کیا گیا ہے۔ محمد رضوان اور عرفان خان ان فٹ ہونے کی وجہ سے ٹیم میں شامل نہیں ہیں جبکہ شاہین آفریدی اور نسیم شاہ کو ریسٹ دیا گیا ہے۔

نیوزی لینڈ کے کپتان مائیکل بریسویل نے ٹاس کے وقت گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ٹیم میں تین تبدیلیاں کی گئی ہیں، لیکن ان کو نام یاد نہیں، آئندہ میچوں کے لیے اپنی محنت جاری رکھیں گے تا کہ ٹیم کو ٹی ٹوئنٹی میچ میں فتح حاصل ہو سکے۔

پاکستان ٹیم کے میچ ہارنے کے بعد کرکٹ شائقین نے سوشل میڈیا ایپ ایکس پر میچ کے حوالے سے سخت تبصرے کیے۔ کچھ شائقین نے بابر اعظم کی کپتانی پر سخت تنقید کی اور چند صارفین نے مارک چیپمین کا شاندار کیچ پکڑنے پر شاداب خان کی خوب تعریف بھی کی۔

ایک صارف نے بابراعظم کی کپتانی اور پاکستان کرکٹ ٹیم کی کارکردگی پر تنقید کرتے ہوئے لکھا کہ “بابر اعظم نے پی سی بی سے درخواست کی ہے کہ وہ اگلے سال نیوزی لینڈ کی اسکول ٹیم کے بجائے نیپال انڈر 19 کے خلاف سیریز کا اہتمام کرے۔ یہ بابر اعظم کی ایک بار دوبارہ نہایت افسوسناک، شرمناک اور بلکل بےخبر کپتانی ہے۔ ان کی معمولی ذہنیت اور حکمت عملی ایک اور سیریز میں ناکامی کی وجہ ہے”

ایک صارف حمزہ شیخ نے مایوس بچے کی تصویر شیئر کرتے ہوئے لکھا کہ “آپ جانتے ہیں کہ ان تصویروں میں سب سے افسوسناک بات کیا ہے کہ یہ ابھی ختم نہیں ہوا ہے، آپ کو اس دفاعی حکمت عملی اپنانے والے اور بد دماغ کپتان کے ساتھ اگلا ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ کھیلنا ہے اور مجھے پورا یقین ہے کہ وہ آپ کو بہت تکلیف دے گا۔ بابراعظم شرم کرو”

ایک اور صارف احشتام صدیقی نے کپتان بابر اعظم کی حمایت میں تبصرہ کرتے ہوئے لکھا کہ “کیا ہم صرف کپتان کی وجہ سے میچز جیتتے ہیں؟ پوری ٹیم اپنا کردار ادا کرتی ہے کیونکہ کرکٹ ایک ٹیم گیم ہے جہاں ہر کسی کو پرفارم کرنا پڑتا ہے؟ کیوں ہر کوئی صرف بابر اعظم پر ہی تنقید کرتا ہے جب ہم ہار جاتے ہیں؟”

دوسری جانب ایک صارف نے شاداب خان کی جانب سے مارک چیپمین کا شاندار کیچ پکڑنے پر وڈیو شیئر کی اور انکی تعریف کرتے ہوئے لکھا کہ “شاداب کے ہاتھوں سپر مین کیچ”

https://twitter.com/13hamdard/status/1783533867368128628?t=80ZD5y5mItL6z6CeMZQRNA&s=19

واضح رہے پاکستان اور نیوزی لینڈ کے درمیان ٹی ٹوئنٹی سیریز کا پہلا میچ بارش کے باعث روک دیا گیا تھا، دوسرے میچ میں پاکستان نے نیوزی لینڈ کو 7 وکٹوں سے شکست دی، تیسرے میچ میں مہمان ٹیم نے پاکستان کو 7 وکٹوں سے جبکہ چوتھے میچ میں 4 رنز سے ہرایا۔ دونوں ٹیموں کے درمیان ٹی ٹوئنٹی سیریز کا پانچواں اور آخری میچ 27 اپریل کو قذافی اسٹیڈیم لاہور میں کھیلا جائے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں