وزیراعظم اور پاکستان میں تعینات فرانسیسی سفیر کے مابین ملاقات میں اسرائیلی جارحیت کا تذکرہ

فرانسیسی سفیر نکولس گیلے نے آج وزیر اعظم شہباز شریف سے ملاقات کی، دفتر خارجہ کا مطابق اس ملاقات میں وزیر خارجہ سینیٹر اسحاق ڈار اور معاون خصوصی بھی شریک تھے
وزیر اعظم شہباز شریف نے فرانسیسی قیادت کا شکریہ ادا کیا، اس موقع پر وزیر اعظم شہباز کا کہنا تھا کہ پاکستان کے فرانس کے ساتھ دوستانہ تعلقات ہیں

وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ کچھ سال پہلے یہ تعلقات مشکل دور سے گزرے تھے, تاہم اب دونوں ممالک ہی دوطرفہ تعاون کو مضبوط بنانے کے لئے ایک ساتھ مل کر کام کررہے ہیں، اس موقع پر وزیر اعظم نے فرانس کے صدر ایمانوئل میکرون کے ساتھ اپنی بات چیت کا ذکر بھی کیا.

وزیر اعظم نے 2022 میں یو این جی اے کے اجلاس میں فرانسیسی صدر ایمانوئل میکرون سے ہونے والی اپنی ملاقات کا ذکر بھی کیا، جنوری 2023 میں جنیوا کانفرنس برائے عالمی ماحولیاتی تبدیلی میں پاکستان کے لئے صدر میکرون کی حمایت کو بھی وزیر اعظم نے سراہا

دفتر خارجہ کے مطابق وزیر اعظم نے صدر میکرون کو جلد از جلد پاکستان کا دورہ کرنے کی بھی دعوت دی، اس ملاقات میں وزیر اعظم نے باہمی تعاون خاص طور پر تجارت اور سرمایہ کاری میں تعاون بڑھانے کی ضرورت پر بھی زور دیا. اس کے ساتھ ہی وزیر اعظم نے فرانسیسی کمپنیز کو پاکستان میں سرمایہ کاری کی بھی دعوت دی

وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ معیشت کو مستحکم بنانا حکومت کے ایجنڈے میں سرفہرست ہے، وزیراعظم نے اس ملاقات میں غزہ میں جاری اسرائیلی جارحیت پر بھی بحث کی

دفتر خارجہ کے مطابق وزیر اعظم شہباز شریف نے خطے میں امن کے قیام کو یقینی بنانے کے لئے فرانس کی کوششوں کو بھی سراہا، اس ملاقات میں افغانستان کی موجودہ صورتحال پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا، دفتر خارجہ کے مطابق فرانسیسی سفیر نے پرتپاک استقبال کرنے پر وزیر اعظم شہباز شریف کا شکریہ بھی ادا کیا
فرانسیسی سفیر نے وزیر اعظم کو دوطرفہ محاذ پر ہونے والی پیش رفت سے بھی آگاہ کیا

فرانسیسی سفیر کا کہنا تھا کہ دوطرفہ باہمی تعاون پر گفتگو کرنے کے لئے فرانسیسی وفد کی پاکستان میں آمد جلد ہی متوقع ہے، فرانس دوطرفہ تعلقات کو مضبوط بنانے کے لئے اقوام متحدہ سمیت دیگر فورمز پر پاکستان کے ساتھ مل کر کام کرنے کا خواہش مند ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں