ترکی کا ٹرننگ پوائنٹ, صدر رجب طیب اردگان کو شکست, اپوزیشن کو بڑی فتح

ترکی ایک ٹرننگ پوائنٹ پر ہے کیونکہ اپوزیشن نے انتخابات میں بہت کامیابیاں حاصل کیں ہیں. ترکی کے صدر رجب طیب اردگان کا کہنا ہے کہ بلدیاتی انتخابات میں اپوزیشن کی شاندار تاریخ ساز کامیابیوں کے بعد ترکی کو ایک اہم لمحے میں قرار دیا ہے, جو ان کی دو دہائیوں کی حکمرانی کے لئے ایک اہم چیلنج ہے.

مرکزی اپوزیشن ریپبلکن پیپلز پارٹی (CHP) نے استنبول, انقرہ, ادانا, برسا اور اناطولیہ میں فتح حاصل کی ہے. ان شہروں کو کبھی اردگان کا گڑھ کہا جاتا تھا. یہ نتائج سیاسی حرکیات میں ایک اہم تبدیلی کی عکاسی کرتے ہیں.

2002 میں اقتدار میں آنے کے بعد سے صدر طیب اردگان کو اس انتخابی نتیجے سے بہت بڑا دھچکا لگا ہے. مبصرین نے اسے 2002 میں اردگان کی بدترین انتخابی شکست قرار دیا ہے.

استنبول جیسے بڑے شہروں میں فتوحات جس کو ترکی کا سیاسی و معاشی دل سمجھا جاتا ہے, صدر اردگان کے انتخابی چیلنج کی گہرائی کو واضح کرتی ہے.

اب دیکھنا یہ ہے کہ صدر رجب طیب اردگان اور AKP اس شکست کا کیا جواب دیں گے اور کیا وہ ووٹروں کے خدشات کو دور کرنے کے لئے اپنی حکمت عملی کو اپنائیں گے

اپنا تبصرہ بھیجیں