وزیرِاعظم شہباز شریف کی روسی سفیر البرٹ پی خوریف سے ملاقات

وزیر اعظم شہباز شریف نے روس کے سفیر سے گزشتہ ہفتے ہونے والے دہشت گرد حملے میں قیمتی جانوں کے ضیاع پر گہرے دکھ کا اظہار کیا

وزیرِاعظم کا کہنا تھا کہ پاکستان اس دکھ کی گھڑی میں روس کے ساتھ یکجہتی کے ساتھ کھڑا ہے.

دفترِ خارجہ کے مطابق وزیر اعظم نے روسی صدر ولادیمیر پیوٹن کی جانب سے پاکستان کے دوبارہ وزیراعظم منتخب ہونے پر بھیجے گئے مبارکبادی پیغام پر ان کا شکریہ ادا کیا

اس ملاقات میں وزیرِ اعظم نے دونوں ممالک کے درمیان تاریخی دوستانہ تعلقات کا بھی ذکر کیا

وزیرِ اعظم کا کہنا تھا کہ پاکستان روس کے ساتھ دیگر شعبوں بالخصوص توانائی, تجارت اور سرمایہ کاری میں دوطرفہ تعاون کو بڑھانا چاہتا ہے

وزیراعظم نے روس میں ہونے والے بین الحکومتی کمیشن کے نویں اجلاس کو جلد بلانے کی ضرورت پر بھی زور دیا, جس کی میزبانی اس سال کے آخر میں روس کرئے گا

دفترِ خارجہ کے مطابق وزیراعظم شہباز شریف نے دونوں ممالک کے درمیان کے تجارتی اور سرمایہ کاری کے تعلقات کو بڑھانے کت لئے اعلی سطحی وفود کے تبادلے پر بھی زور دیا

وزیرِ اعظم نے گزشتہ سال 2022 میں سمر قند میں شنگھائی تعاون تنظیم کے سربراہی اجلاس کے موقع پر روسی صدر پیوٹن کے ساتھ ہونے والی اپنی ملاقات کا بھی ذکر کیا اور صدر پیوٹن کو جلد ہی پاکستان کا سرکاری دورہ کرنے کی دعوت بھی دی

اس موقع پر روسی سفیر کا کہنا تھا کہ روس پاکستان کے ساتھ مضبوط تعلقات استوار کرنا چاہتا ہے

روسی سفیر کا مزید کہنا تھا کہ روس پاکستان کے ساتھ توانائی, تجارت اور سرمایہ کاری کے شعبے کے علاوہ تعلیم اور ثقافت میں بھی تعاون بڑھانے کا خواہش مند ہے

یاد رہے کہ دونوں ممالک شنگھائی تعاون تنظیم میں بھی سرگرم عمل ہیں

اپنا تبصرہ بھیجیں