غزہ میں اسرائیلی جارحیت کی وجہ سے اب تک مجموعی طور پر 5800 طلباء شہید

وزارت تعلیم فلسطین نے انکشاف کیا ہے کہ غزہ کی پٹی میں 7 اکتوبر سے لے کر اب تک اسرائیل کی جارحیت کی وجہ سے لاتعداد طلباء اور اساتذہ شہید اور زخمی ہو چکے ہیں۔ اسارٸیلی فوجیوں کے حملوں کے نتیجے میں اب تک 5,881 طلباء شہید ہوئے ہیں جبکہ 9,899 زخمی ہوئے ہیں۔ فلسطینی وزارت تعلیم کی رپورٹ مطابق غزہ کی پٹی میں جارحیت کے دوران شہید ہونے والے طلباء کی تعداد 5,826 تک پہنچ گئی اور 9,570 زخمی ہوٸے ہیں۔

رپورٹ میں ذکر ہے کہ مغربی کنارے میں بھی جارحیت کے نتیجے میں 55 طلباء شہید اور 329 زخمی ہوٸے ہیں، جن میں سے 103 کو گرفتار بھی کیا گیا ہے۔ دوسری جانب غزہ کے تعلیمی اداروں میں موجود 264 اساتذہ اور منتظمین شہید اور 960 زخمی بھی ہو چکے ہیں۔ ان اساتذہ کی شہادت اور زخمی ہونے کی وجہ سے تعلیمی عمل کافی حد تک متاثر ہو رہا ہے، جس کے نتیجے میں طلباء کو مستقبل کے لیے مضبوطی کی بجائے کمزوریوں کا سامنا کرنا پڑے گا۔

اسراٸیلی فوج کی اس ظالمانہ جارحیت کی بناء پر طلباء کو تعلیمی سفر میں بہت بڑا خطرہ لاحق ہو سکتا ہے، جس کی وجہ سے طلباء کو تعلیم سے محرومی کا سامنا کرنا پڑے گا۔ اساتذہ کی شہادت اور زخمی ہونے سے نہ صرف طلباء کی زندگیوں پر بلکہ تعلیمی نظام پر بھی منفی اثرات پڑ رہے ہیں۔ اگر طلباء اور استاذہ کی شہادتوں کا دورانیہ بڑھتا رہا تو مستقبل میں فلسطینی بچوں کو تعلیم میں مزید مشکلات کا سامنا کرنا پڑے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں